Jan 23, 2021 | 6:14 PM

Trend TV

Better Informed Today

خزاں اگر بہار ہے

خزاں اگر بہار ہے، تو ٹھیک ہے

خزاں اگر بہار ہے، تو ٹھیک ہے
تجھے سکوں قرار ہے؟ تو ٹھیک ہے
مرے بھی دل میں درد ہے ذرا ذرا
تجھے بھی مجھ سے پیار ہے، تو ٹھیک ہے
عداوتوں کے تیر، سب خطا کئے
محبتوں کا وار تو ٹھیک ہے
یہ زندگی کسی طرح تو سہل ہو
کسی کا انتظار ہے، تو ٹھیک ہے
زمانہ معتبر نہیں تو غم نہ کر
جو اعتبارِ یار ہے، تو ٹھیک ہے
یہ جسم بھی کسی کا ہے دیا ہوا
یہ سانس بھی ادھار ہے، تو ٹھیک ہے
میں ہوش میں تو ہجر سہہ نہ پاؤں گی
سحر اگر خمار ہے تو ٹھیک ہے
(محمد عدنان خضر)