May 16, 2021 | 7:26 PM

Trend TV

Better Informed Today

بے قراری سی بے قراری ہے

جون ایلیا :بے قراری سی بے قراری ہے

بے قراری سی بے قراری ہے

وصل ہے اور فراق طاری ہے

جو گزاری نہ جا سکی ہم سے

ہم نے وہ زندگی گزاری ہے

بن تمہارے کبھی نہیں آئی

کیا مری نیند بھی تمہاری ہے

اس سے کہیو کہ دل کی گلیوں میں

رات دن تیری انتظاری ہے

اک مہک سمتِ دل سے آئی تھی

میں یہ سمجھا تری سواری ہے

حادثوں کا حساب ہے اپنا

ورنہ ہر آن سب کی باری ہے

شاعر: جون ایلیا