May 16, 2021 | 7:34 PM

Trend TV

Better Informed Today

واٹس ایپ میں اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن کو تبدیل نہیں کیا جا رہا، سربراہ وِل کیتھکارٹ

میسجنگ ایپ واٹس ایپ کی پرائیویسی پالیسی میں تبدیلی پر ہونے والی تنقید کے واٹس ایپ کے سربراہ وِل کیتھارٹ نے وضاحت دیتے ہوئے کہا ہے کہ واٹس ایپ میں پیغامات اور کالز اب بھی “اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ” ہیں اور اس فیچر کو تبدیل نہیں کیا جا رہا۔

تفصیلات کے مطابق واٹس ایپ نے نئی پرائیویسی پالیسی کا اعلان کیا جس کے مطابق واٹس ایپ صارفین کی معلومات تھرڈ پارٹی بشمول فیس بک کے ساتھ شیئر کر سکے گا۔واٹس ایپ کی جانب سے جب یہ نیا فیچر متعارف کرایا گیا تو اس پر واٹس ایپ کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور صارفین اس پریشانی میں مبتلا ہیں کہ کیا ان کے پیغامات اور رابطے محفوظ بھی ہیں کہ نہیں؟
سوشل میڈیا پر کافی تنقید کے بعد واٹس ایپ کے سربراہ کو میدان میں آنا پڑا اور انہیں وجاحت کرنی پڑی کہ نئی پالیسی کے بعد بھی صارفین کے چیٹ محفوظ ہے اور اسی کوئی تھرڈ پارٹی نہیں پڑھ سکے گی۔

یاد رہے کہ اینڈ یو اینڈ انکرپشن کا مطلب ہے کہ واٹس ایپ سمیت کوئی بھی تیسرا فرد یا ادارہ واٹس ایپ پر دو افراد کے درمیان ہونے کے پیغامات یا کالز کو دیکھ یا سن نہیں سکتا۔

واٹس ایپ کی نئی پالیسی کے مطابق صارف اپنا نام، موبائل نمبر، تصویر، اسٹیٹس، فون ماڈل، آپریٹنگ سسٹم کے ساتھ ساتھ ڈیوائس کی انفارمیشن، آئی پی ایڈریس، موبائل نیٹ ورک اور لوکیشن بھی واٹس ایپ اور اس سے منسلک دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو مہیا کرے گا۔
واٹس ایپ کی نئی پرائیویسی کو اگر پڑھیں تو پیغامات کی ‘اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن’ کو ختم کرنے کی بات موجود نہیں ہے اور یہ درج ہے کہ دو افراد کے درمیان ہونے والی گفتگو واٹس ایپ سمیت کوئی تیسرا فرد یاادارہ نہیں دیکھ سکتا۔