May 16, 2021 | 8:42 PM

Trend TV

Better Informed Today

ٹک ٹاک کا استعمال نوجوان نسل کیلئے نشے کی طرح ہے، پشاور ہائیکورٹ کا حکم نامہ جاری

پشاور: پشاور ہائیکورٹ نے ویڈیو سٹریمنگ ایپ ٹاک ٹاک پر پابندی کا حکم نامہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کا استعمال نوجوان نسل کیلئے نشے کی طرح ہے۔

ٹک ٹاک کی بندش سے متعلق ہائیکورٹ کی جانب سے جاری حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ اس ایپ پر بہت سی ویڈیوز فحاشی، غیر اخلاقی اور روایات کے برعکس ہیں۔ اس کے علاوہ اس پر ویڈیوز کو جانچنے کیلے کوئی طریقہ کار موجود نہیں ہے۔ عدالت عالیہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ غیر اسلامی، غیر اخلاقی ویڈوز پر متعلقہ اداروں سے مثبت نتائج نہ آئے۔ ڈی جی پی ٹی اے نے مؤقف اپنایا ٹک ٹاک آفس سنگاپور میں ہے اور کہا کہ ویڈیوز کو سینسر، فلٹر یا ہٹانا ہمارے بس میں نہیں ہے۔ حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ اس کو سینسر کرنا مشکل ہے، واحد حل اس پر پابندی یا بند کرنا ہے۔ ٹک ٹاک پر ایسے مواد بھی اپ لوڈ ہوتے ہیں جو دیکھنے کے قابل نہیں ہیں۔

عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ بعض نوجوانوں نے ٹک ٹاک ویڈیوز بناتے وقت خود کشی بھی کی۔ کچھ اسلامی ممالک میں ٹک ٹاک پر پابندی عائد ہے۔ پی ٹی اے کو ہدایت کی سینسر کا طریقہ کار آنے تک ٹک ٹاک بند کی جائے۔ پی ٹی اے اس حوالے سے اپنی رپورٹ جمع کرائے۔